سب جانتے ہیں کہ میرے ساتھ نہ انصافی ہو رہی ہے لیکن کوئی آواز نہیں اٹھا رہا, ایک قومی کرکٹر کی عوام سے گزارش

سب جانتے ہیں کہ میرے ساتھ نا انصافی ہو رہی ہے لیکن کوئی آواز نہیں اٹھا رہا. ایک قومی کرکٹر کی عوام سے گزارش

پاکستان کرکٹ کی ناکامی کی ایک وجہ سفارشی نظام بھی ہے.  یہاں چھوٹے کرکٹر سے لے کر چیئرمین تک سب اپنے چہیتوں کو موقع دینے کی سفارشوں پہ لگے ہوتے ہیں.  چیف سلیکٹر تو ایک ڈمی بٹھایا جاتا ہے جو بس لاکھوں روپے بورڈ سے ہڑپتا رہتا ہے.  عماد وسیم ایک اچھے آل راؤنڈر رہے ہیں ٹیم کے مگر ان کو سرفراز کی طرح خاموشی سے نکال دیا گیا اور انھوں نے کبھی کسی سے گلا بھی نہیں کیا.

یہاں تک کے کسی سے کہا بھی نہیں کے ان کے ساتھ نا انصافی کی جا رہی ہے یا کچھ بھی گلا نہیں کیا.  عماد وسیم نے کچھ روز قبل ایہ نجی ٹی وی پر ایک سوال پر جب ان سے پوچھا گیا کہ وہ آواز کیوں نہیں اٹھاتے تو ان کا کہنا تھا سبھی جانتے ہیں کہ میرے ساتھ نا انصافی ہو رہی ہے میری پرفارمنس کے باوجود بھی مجھے نکال دیا گیا.  لیکن کوئی آواز نہیں اٹھا رہا اور میں ایسا انسان نہیں ہوں جس کو اگر ٹیم میں شامل نہ کیا جائے تو وہ میڈیا پر آکر کسی پر تنقید کرے، یا پھر واویلا کرتا رہے.   میرا تعلق ایک اچھی فیملی سے ہے اور میں کبھی کسی کے خلاف بات نہیں کروں گا.

 

Leave a Comment